فٹنس ٹیسٹ پاس نہ کرنے والے قومی کرکٹرز پر جرمانہ لگانے کا فیصلہ

لاہور(این پی پی) پاکستان کرکٹ بورڈ نے قومی کرکٹرز کے فٹنس ٹیسٹ کا شیڈول جاری کردیا اور مطلوبہ معیار نہ رکھنے والے کرکٹرز کی تنخواہ میں سے 15 فیصد کٹوتی ہوگی۔سینٹرل کنٹریکٹ یافتہ قومی کھلاڑیوں کے فٹنس ٹیسٹ کا چوتھا مرحلہ 6 اور 7 جنوری کو نیشنل کرکٹ اکیڈمی لاہور میں ہوگا، سینٹرل کنٹریکٹ یافتہ تمام دستیاب کھلاڑی دو روزہ فٹنس ٹیسٹ میں شرکت کے پابند ہوں گے، بنگلا دیش پریمیئر لیگ میں مصروف تین کرکٹرز محمد عامر، وہاب ریاض اور شاداب خان کو ابتدائی طور پر فٹنس ٹیسٹ میں شرکت سے استثنیٰ دیا گیا ہے۔ ان کے فٹنس ٹیسٹ 20 اور 21 جنوری کو لیے جائیں گے۔ کھلاڑیوں کے فٹنس ٹیسٹ کی نگرانی قومی کرکٹ ٹیم کے اسٹرینتھ اینڈ کنڈیشنگ کوچ یاسر ملک کریں گے، ہر کھلاڑی کا فٹنس ٹیسٹ پانچ حصوں پر مشتمل ہوگا جن میں فیٹ اینالسز، اسٹرینتھ، اینڈیورنس، اسپیڈ اینڈیورنس اور کراس فٹ شامل ہیں۔ ‏اس دوران مطلوبہ معیار حاصل نہ کرنے والے کھلاڑی پر ماہانہ ریٹینر شپ کا 15 فیصد جرمانہ عائد کردیا جائے گا۔ یہ جرمانہ اس وقت تک برقرار رہے گا جب تک وہ فٹنس کے طے کردہ کم سے کم معیار کو حاصل نہیں کر لیتا۔فٹنس ٹیسٹ میں مسلسل ناکامی کی صورت میں اس کرکٹر کا سینٹرل کنٹریکٹ برقرار رکھنا بھی خطرے میں پڑجائے گا ڈائریکٹر انٹرنیشنل کرکٹ پاکستان کرکٹ بورڈ ذاکر خان کا کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ قومی کھلاڑیوں کی فٹنس کا مسلسل جائزہ لینے پر ہمیشہ زور دیتا ہے لہٰذا پی سی بی نے اس مرتبہ فٹنس کا مطلوبہ معیار حاصل نہ کرنے والے کھلاڑیوں پر جرمانہ عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کا مقصد قومی کھلاڑیوں میں فٹنس کے بہترین معیار میں تسلسل برقرار رکھنا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں