چاند کی جانب انڈیا کے تاریخی سفر کی ابتدا ہے۔ 15 کروڑ ڈالر خرچ

انڈیا نے چاند پر اپنے دوسرے مشن ’چندریان ٹو‘ کو کامیابی سے روانہ کردیا ہے۔ یہ خلائی جہاز گذشتہ ہفتے تکنیکی خرابی کے سبب روانہ

نہیں کیا جا سکا تھا۔

انڈیا کے خلائی ادارے اسرو کے مطابق ’چندریان ٹو‘ کو پیر کے روز مقامی وقت کے مطابق دوپہر دو بج کر 43 منٹ پر خلا میں بھیجا گیا

ہے۔

’چندریان ٹو‘ کو خلا میں روانہ کرنے کے مناظر ٹیلی وژن اور خلائی ادارے کے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر براہ راست دکھائے گئے۔

اسرو کے سربراہ ڈاکٹر سیوان نے یہ خلائی مشن جاری کرنے کے بعد اپنی تقریر میں کہا ’یہ چاند کی جانب انڈیا کے تاریخی سفر کی ابتدا

ہے۔‘

اسرو کی جانب سے کہا گیا ہے کہ چاند کے لیے روانہ کی جانے والی ’پہلے سے کہیں مضبوط خلائی گاڑی پر سوار ایک ارب خواب چاند پر

پہنچیں گے۔‘

اسرو نے امید ظاہر کی ہے کہ 15 کروڑ ڈالر کے خرچ والا یہ مشن پہلا ایسا مشن ہے جو چاند کے جنوبی قطب پر اترے گا۔

اس سے قبل 15 جولائی کو چاند کے لیے روانہ ہونے والا مشن مقررہ وقت سے 56 منٹ قبل ’لانچ وہیکل سسٹم میں تکنیکی خرابی‘ کے سبب

روک دیا گیا تھا۔

انڈین میڈیا میں یہ خبر شائع ہوئی تھی کہ کرایوجینک انجن میں گیس کے بوتل سے ہیلیئم گیس کا خارج ہونا اس کا سبب تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں