بھارت کا چاند پر اترنے کا مشن پھر فیل،15 کروڑ ڈالر ضائع

بھارت کی چاند پر اترنے کی دوسری کوشش بھی ناکام ہوگئی اور خلائی مشن کا رابطہ چاند پر لینڈنگ سے چند منٹ پہلے منقطع ہوگیا جس کے بعد وزیراعظم نریندر مودی مایوس ہوکر بھارتی اسپیس ایجنسی کے سربراہ کو تسلیاں دے کر خلائی مرکز سے چلے گئے۔

بھارت کے خلائی مشن چندریان ٹو سے موصول ہونے والے سگنل چاند پر لینڈنگ سے چند منٹ منقطع ہوگئے۔

خلائی مشن کی ناکامی پر بھارتی اسپیس ایجنسی کے سربراہ جذباتی ہوکر آبدیدہ ہوگئے جس کےبعد بھارتی وزیراعظم انہیں تسلیاں دیتے رہے۔

چاند کی جانب انڈیا کے تاریخی سفر کی ابتدا ہے۔ 15 کروڑ ڈالر
خرچ

مشن فیل ہونے پر مودی اسپیس ایجنسی کے سربراہ کو تسلیاں دے رہے ہیں، فوٹو بشکریہ بھارتی میڈیا
بھارتی اسپیس ایجنسی کے سربراہ کا کہنا ہے کہ وکرم لینڈر معمول کے مطابق مشن پر رواں دواں تھا لیکن چاند کی سطح سے 2.1 کلومیٹر کے فاصلے پر رابطہ منقطع ہوگیا ، اس سلسلے میں ڈیٹا کا جائزہ لیا جارہا ہے۔

چاند پر لینڈنگ کا منظر دیکھنے کے لیے بھارتی وزیراعظم مودی بھی اسپیس ایجنسی کے ہیڈ کوارٹرمیں تھے ، جب انہیں بتایا گیا کہ سگنل منقطع ہوگیا ہے تو مودی مایوس ہوکر وہاں سے چلے گئے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق بھارت کا چاند مشن بظاہر ناکام ہوگیا ہے، وہ چاند کے قطب جنوبی پر لینڈنگ کرنے والا پہلا ملک بننا چاہتا تھا۔ اس سے قبل 2008 میں بھی بھارت کا چاند مشن ناکام ہوگیا تھا جب کہ امریکا، روس اور چین چاند کی سطح پر کامیاب لینڈنگ کرچکے ہیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں